Pages

Subscribe:

Friday, 18 May 2012

محبت تول دی اس نے

میرے اصرار پر آخر ،
بہت مجبور ہو کر آج .
مجھے اپنی نگاہوں کی ،
اداسی سونپ دی اس نے .
بہت بے بس ،
بہت تنہا ،
بہت بکھری محبت کی .
حقیقت کھول دی اس نے .
خلش جو اس کے دل میں تھی ،
وہ اب میری امانت ہے .
شکستہ لہجے کی جتنی ،
تھکن تھی ،
بول دی اس نے .
میری خاطر مجھے اپنی ،
محبت کہہ نہیں پائی .
مگر آج اپنے آنسوؤں سے ،
محبت تول دی اس نے .
حقیقت کھول دی اس نے .

0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

نوٹ:- اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔