Pages

Subscribe:

Friday, 22 June 2012

نئے دنوں کے نئے سفر میں دھیان رکھنا

نئے دنوں کے نئے سفر میں دھیان رکھنا
خاموش ، چپ چاپ
کچھ نا کہتی ان ساعتوں نے
سونپ ڈالے نئے تقاضے رفاقتوں کے
دھیان رکھنا
کے اپنے حصے کے سب تقاضے نبھانے ہیں
ساتھ چلتے ہوئے سفر میں
ہر اک ڈگر پہ چاہتوں کے گلاب لکھنا
ورق ورق اعتماد جس میں
حرف حرف میں ہو جان نثاری
نئی خوشیاں ، نئے مناظر
نئی مثالیں ، نئے حوالے
بس ایک ایسی ہی محبتوں کی کتاب لکھنا
نئے دنوں کے نئے سفر میں

0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

نوٹ:- اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔